Thu. Apr 18th, 2024
Ehsaas Masawat Program 8171 For Transgender New Registration 2024

Ehsaas Masawat Program

Ehsaas Masawat Program provides financial assistance to all transgenders so that they can meet their basic needs. All transgenders are eligible for Ehsaas Program. They should register themselves immediately and get financial assistance. Get all the details regarding the complete process of registration.

Ehsaas Masawat Program Eligibility Criteria 

دنیا کے کئی ممالک کی طرح پاکستان میں بھی خواجہ سرا اپنی ذاتی زندگی میں بہت سے مسائل کا شکار ہیں۔ یہ مسائل انہیں احساس کمتری میں مبتلا کر دیتے ہیں۔ اس کی وجہ سے وہ پسماندہ ہیں اور خود کو تنہا محسوس کرتے ہیں۔ مساوات پروگرام کا آغاز کیش ٹرانسفر، روزگار،

یا بوڑھے اور معذور خواجہ سراؤں کے لیے کاروبار کے مواقع تاکہ وہ عام لوگوں کی طرح زندگی گزار سکیں اور صحت مند اور آسان روزگار کے مواقع بھی حاصل کر سکیں۔ یہ پروگرام بزرگ خواجہ سراؤں کو ماہانہ 3 ہزار روپے کی نقد رقم فراہم کرتا ہے۔ یہ رقم پنجاب بھر میں کسی بھی HBL Konnect ایجنٹ سے تقسیم کی جا سکتی ہے۔

احساس مسوّت پروگرام میں اہلیت کا معیار بہت آسان اور مختصر رکھا گیا ہے۔

40 سال سے زیادہ عمر کے تمام ٹرانسجینڈر مساوات پروگرام کے اہل ہو سکتے ہیں۔

40 سال سے کم عمر کے معذور ٹرانسجینڈر بھی اس پروگرام کے لیے اہل ہیں۔

خواجہ سرا کے پاس اپنا قومی شناختی کارڈ ہونا ضروری ہے جس پر اسے خواجہ سرا کے طور پر داخل کیا گیا ہو۔

معذور خواجہ سراؤں کے شناختی کارڈ میں ان کی معذوری کا ذکر ہونا چاہیے۔

For More Information: Ehsaas Program New Registratio

Ehsaas Masawat Program New Registration

احساس مساوات پروگرام میں رجسٹریشن شروع ہو گئی ہے۔ انہیں نادرا جا کر اپنا شناختی کارڈ بنوانا ہوگا، جس میں انہیں خود کو بطور خواجہ سرا رجسٹر کرانا ہوگا۔ احساس مساوات پروگرام میں رجسٹر ہونے کے لیے، خواجہ سراؤں کو اپنا قومی شناختی کارڈ لے کر احساس پروگرام یا بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے دفتر جانا چاہیے،

اور اپنا سروے کروائیں۔ درخواست منظور ہونے کے بعد، آپ کو اپنے موبائل نمبر پر 8171 سے درخواست کی منظوری کا پیغام موصول ہوگا۔ اس کے بعد، آپ کو متعلقہ بینک سے منظور شدہ رقم ادا کی جائے گی۔ اس پروگرام کے تحت سینئر ٹرانس جینڈر افراد کو ماہانہ 3,000 روپے ملیں گے، اور دوسرے ٹرانس جینڈر افراد کو 2000 روپے ماہانہ ملیں گے۔

حکومت پاکستان کو معاشرے میں مساوات اور انصاف کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ یہ پروگرام سماجی اور اقتصادی ترقی کو فروغ دینے والا صنفی حساس پروگرام ہے۔ تمام اہل خواجہ سرا پنجاب بینک کی کسی بھی برانچ سے اپنی رجسٹریشن کروا سکتے ہیں اور وہاں سے رقم حاصل کر سکتے ہیں۔

Ehsaas Masawat Program Aims 

پاکستان میں تمام رجسٹرڈ خواجہ سرا اپنا کاروبار قائم کرنے کے اہل ہوں گے۔ مساوات پروگرام کے تحت حکومت پاکستان خواجہ سراؤں کو ایک لاکھ روپے تک کے بلاسود قرضے فراہم کرے گی۔ ان کے علاج اور ادویات تک رسائی کے لیے محکمہ صحت نجی شعبے کی کمپنی کے ساتھ مل کر میڈیکل کیمپ کا انعقاد کرے گا۔

اس پروگرام کا مقصد خواجہ سراؤں کو پرامن اور محفوظ زندگی گزارنے اور ان کے طرز زندگی کو بہتر بنانے میں مدد کرنا ہے۔ خواجہ سراؤں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا کرنے، خواجہ سراؤں کے حقوق کے لیے بیداری پیدا کرنے اور انھیں معاشرے میں عزت اور مساوی حقوق دلانے کے لیے بہت سے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

You Can Also Read It: Ehsaas 14000 Program

Objectives of the Ehsaas Masawat Program

ٹرانس جینڈر لوگوں کو روزی روٹی اور رہائش کی خدمات فراہم کرنا جنہیں عام طور پر سروس پروگراموں سے خارج کر دیا جاتا ہے۔ان کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کے لیے مساوات کا پروگرام شروع کیا گیا۔خواجہ سراؤں کے مالی سرمائے میں اضافے کو فروغ دینا تاکہ انہیں بے روزگاری سے بچایا جا سکے۔آمدنی پیدا کرنے والے ذرائع تک ان کی رسائی کو یقینی بنانا۔ٹرانس جینڈر لوگوں کی صحت کو بہتر بنانا تاکہ وہ جان لیوا بیماریوں سے محفوظ رہ سکیں۔ 

جب یہ لوگ پیٹ بھرنے کی وجہ سے روزی کمانے کے قابل نہیں رہتے تو انتہائی غربت کا شکار ہو جاتے ہیں۔ ان باتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ٹرانس جینڈر کمیونٹی کو بھی امدادی پروگرام میں شامل کیا گیا۔ انہیں مساوات پروگرام کے تحت 9000 سہ ماہی امداد دی جاتی ہے تاکہ وہ اپنی بنیادی ضروریات آسانی سے پوری کر سکیں۔