Thu. Apr 18th, 2024
Ehsaas Langar Khana Program New Registration Latest Update 

Ehsaas Langar Khana Program

Ehsaas Langar Khana Program was inaugurated in 2024. Now you can register yourself and get free food from the Ehsaas Langar Khana Program and satisfy your hunger. With the help of the Ehsaas Langar Khana Program, you can eat free food without wasting money. If you are a laborer in an area and you don’t have money for food, then the Ehsaas program will help you and with this help, you can get free food.

You Can Also Read It: 8171 Check Account Balance

احساس لنگر پروگرام غذائی عدم تحفظ کو دور کرنے اور پسماندہ افراد کو کھانا فراہم کرنے پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔ لنگر کا لفظ سکھوں کے “لنگر” کے تصور سے نکلا ہے۔ جہاں تمام افراد کو ان کی سماجی حیثیت سے قطع نظر مفت کھانا فراہم کیا جاتا ہے۔

اس پروگرام کا مقصد ان لوگوں کو غذائیت سے بھرپور کھانا فراہم کرنا ہے جو اپنا کھانا برداشت نہیں کر سکتے۔ یہ پروگرام خاص طور پر روزانہ اجرت کمانے والے، بے گھر اور انتہائی غربت کا سامنا کرنے والے لوگوں کے لیے شروع کیا گیا تھا۔ احساس لنگر پروگرام نے 112 لنگر ہاؤسز قائم کیے ہیں جو لوگوں کو گرم کھانا پیش کرتے ہیں، اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ انہیں دن میں کم از کم ایک بار غذائیت سے بھرپور اور بھر پور کھانا ملے۔

Eligibility Criteria For Ehsaas Langar Khana 

پاکستان کی زیادہ تر آبادی دیہات میں رہتی ہے، اور رزق کی تلاش میں بڑے شہروں کا رخ کرتی ہے اور وسائل کی کمی کی وجہ سے کرائے کے مکانات برداشت نہیں کر سکتی۔ اس لیے وہ فٹ پاتھ پر رہنے پر مجبور ہیں۔ ایسے لوگوں کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے احساس لنگر خانہ پروگرام شروع کیا گیا۔ اس پروگرام کے مراکز عموماً ان علاقوں میں قائم کیے جاتے ہیں جہاں کمزور اور غریب آبادی مرکوز ہے۔

اس پروگرام میں تقسیم کیا جانے والا کھانا مقامی تنظیموں کی مدد سے تیار کیا جاتا ہے۔ یہ ایک ایسی جگہ فراہم کرتا ہے جہاں لوگ اکٹھے ہو کر کھانا تقسیم کر سکتے ہیں۔ یہ پروگرام نہ صرف خوراک کی کمی کو دور کرتا ہے بلکہ سماجی ہم آہنگی، ہمدردی، شمولیت، افہام و تفہیم اور بھائی چارے کو بھی فروغ دیتا ہے۔

For More Information: BISP 9000 Program

ایک بات جو ہمیشہ یاد رکھنی چاہیے وہ یہ ہے کہ لنگر خانہ پروگرام کسی مخصوص گروہ کے لیے نہیں ہے۔ خواہ آپ امیر ہوں یا غریب، آپ کا تعلق کسی بھی برادری یا فرقے سے ہے، آپ کسی بھی علاقے کے رہنے والے ہیں، آپ بغیر کسی پابندی کے احساس لنگر خانہ جا کر کھانا کھا سکتے ہیں۔ اس پروگرام میں اہلیت کا کوئی معیار نہیں ہے۔

اس پروگرام کے ذریعے حکومت ایسا ماحول پیدا کرنے کی حوصلہ افزائی کرتی ہے جہاں لوگ اکٹھے ہو کر کھانا کھا سکیں اور آپس میں ہمدردی اور افہام و تفہیم پیدا کر سکیں۔ احساس لنگر خانہ پروگرام پسماندہ طبقات کو ان کے معیار زندگی کو بہتر بنانے میں مدد کرتا ہے۔

Ehsaas Langar Khana New Registration 

یہ پروگرام اسلام آباد میں شروع ہوا۔ اس وقت صرف ایک لنگر کھانا قائم تھا۔ اب پاکستان کے چاروں صوبوں میں 33 احساس لنگر خانے ہیں، جو مستحق لوگوں کو دن میں تین وقت کا کھانا فراہم کرتے ہیں۔ ان مراکز سے روزانہ سینکڑوں لوگ کھانا کھا سکتے ہیں کیونکہ ان لنگر کھانوں میں پیش کیے جانے والے کھانے میں کوئی امتیاز نہیں ہے۔ آپ کو اس پروگرام میں اپلائی کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

اس پروگرام میں رجسٹریشن 2019 میں شروع ہوئی جب پہلی بار احساس لنگر خانہ کھولا گیا۔ لیکن، اب آپ کو اس پروگرام کے لیے رجسٹر کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ آپ کسی بھی وقت احساس لنگر فوڈ پر جا کر کھا سکتے ہیں۔ اس پروگرام کا مقصد ان تمام لوگوں کو کھانا فراہم کرنا ہے جو اس کی استطاعت نہیں رکھتے۔ جب سابق وزیراعظم عمران خان نے پہلی بار احساس لنگر کھانے کا افتتاح کیا،

پہلے دن تقریباً 800 لوگوں نے مفت کھانا کھایا۔ احساس لنگر کھانے میں مختلف قسم کے کھانے پکائے جاتے ہیں تاکہ غریب لوگ بھی غذائیت سے بھرپور اور لذیذ کھانے سے لطف اندوز ہو سکیں۔ اس پروگرام کے تحت لوگوں کو روٹی، چاول، دال اور چکن پیش کیا جاتا ہے۔ امید ہے کہ اگلی حکومت میں اس پروگرام کو مزید وسعت دی جائے گی اور احساس لنگر خانوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔

Ehsaas Langar Khana Centers Location 

احساس لنگر فوڈ پروگرام بیواؤں، بزرگ شہریوں اور روزانہ اجرت کمانے والوں کو ذہن میں رکھتے ہوئے ڈیزائن کیا گیا تھا جو کھانا خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے۔ احساس لنگر خانہ ہسپتالوں، ریلوے سٹیشنوں اور بس سٹینڈز کے قریب قائم کیا گیا ہے تاکہ مسافروں، مریضوں،

اور ضرورت مند لوگ اس پروگرام سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھا سکتے ہیں، اور امداد مستحق لوگوں تک پہنچ سکتی ہے۔ احساس کوئی بھوکا نہ سوئے یا احساس لنگر خانہ پروگرام ایک ہی پروگرام ہے۔ اس کا آغاز حکومت پاکستان نے 7 اکتوبر 2019 کو کیا تھا۔ اس پروگرام کا مقصد غربت اور بھوک کا خاتمہ کرنا ہے۔

احساس لنگر خانہ پروگرام کے مراکز ملک کے کئی شہروں کوئٹہ، فیصل آباد اور کراچی میں قائم کیے گئے ہیں۔ تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ اس پروگرام سے مستفید ہو سکیں۔ احساس لنگر خانہ پروگرام پورے پاکستان میں تقریباً 10 لاکھ لوگوں کو کھانا فراہم کرتا ہے اور اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ کوئی بھی بھوکا نہ رہے۔ اس پروگرام کے تحت حکومت پاکستان پاکستان کو بھوک سے پاک بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔

Ehsaas langer program list Khana

روزانہ مزدوروں اور مزدوروں کے لیے طرح طرح کے کھانے پکائے جاتے ہیں اور پیش کیے جاتے ہیں۔ اس میں روٹی، چاول، دال، سبزی اور چکن شامل تھے۔ اس پروگرام کا مقصد ضرورت مندوں کو بنیادی پرورش بخش خوراک فراہم کرنا ہے اور اس میں عام طور پر روٹی (فلیٹ بریڈ)، چاول، دال، سبزیاں اور بعض اوقات گوشت جیسی اشیاء شامل ہوتی ہیں، جو کہ دستیاب مقام اور وسائل کے لحاظ سے ہے۔ عین مطابق مینو کا تعین مقامی فراہم کنندگان کے ذریعہ کیا جاتا ہے اور یہ علاقائی اور ثقافتی غذائی طریقوں کی بنیاد پر مختلف ہوسکتا ہے۔

روٹی (فلیٹ بریڈ)
چاول
دال (جیسے دال)
سبزیاں (جیسے آلو، گاجر، مٹر وغیرہ)
گوشت (جیسے چکن یا گائے کا گوشت، دستیابی اور علاقائی غذائی طریقوں پر منحصر ہے)
کھانے کی اشیاء جیسے روٹی، چاول، دال، سبزیاں اور گوشت کی خریداری اور تقسیم
رضاکاروں کا انتظام اور ہم آہنگی، بشمول کھانے کی تیاری اور تقسیم
کھانے کی تقسیم کی جگہوں پر حفاظت اور حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے مقامی حکام، جیسے کہ پولیس اور ہنگامی خدمات کے ساتھ ہم آہنگی۔
پروگرام کی تاثیر اور اثر کی نگرانی اور تشخیص، بشمول ڈیٹا اکٹھا کرنا اور رپورٹنگ کرنا
پروگرام کے جاری آپریشن میں تعاون کے لیے فنڈ ریزنگ اور کمیونٹی آؤٹ ریچ کی کوششیں۔

You Can Also Read It: BISP Program NADRA

Conclusion

احساس لنگر پروگرام ایک اہم اقدام ہے جو پاکستان میں پسماندہ لوگوں کو مفت کھانا فراہم کرتا ہے۔ یہ پروگرام بھوک اور غذائی قلت کے مسئلے سے نمٹنے، سماجی ہم آہنگی پیدا کرنے اور غریبوں کے لیے معاشی مواقع پیدا کرنے میں مدد کرتا ہے۔ پروگرام کو افراد اور تنظیموں کے عطیات سے تعاون حاصل ہے، اور کوئی بھی رقم، خوراک، یا رضاکارانہ طور پر اپنا وقت دے کر پروگرام میں حصہ ڈال سکتا ہے۔ احساس لنگر پروگرام اس بات کی ایک روشن مثال ہے کہ کس طرح کمیونٹی پر مبنی اقدام غریب لوگوں کی زندگیوں میں حقیقی تبدیلی لا سکتا ہے۔